مسئلہ کشمیر پرسمجھوتہ خار ج ازامکان 

کرتار پورکی وجہ سے کشمیر کا معاملہ پسِ پشت ڈالنا ناممکن: ڈاکٹر محمد فیصل
سرینگر؍؍کے این این ؍؍پاکستان نے مسئلہ کشمیر کسی بھی سمجھوتہ کو خار ج ازامکان قرار دیتے ہوئے دو ٹوک الفاظ میں واضح کیا ہے کہچین نے کشمیر کو سفید رنگ میں ظاہرکیا جب کہ چینی سرکاری ٹی وی نے تسلیم شدہ نقشہ استعمال کیا ۔پاکستانی دفتر خارجہ کے ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا کہ یہ بات ذہن سے نکال دینی چاہیے کہ کرتار پورکی وجہ سے کشمیر کا معاملہ پیچھے چلا جائے گا۔کشمیر نیوز نیٹ ورک مانیٹر نگ ڈیسک کے مطابق اسلام آباد میں پاکستانی دفتر خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا کہ مسئلہ کشمیر پاکستان کی خارجی پالیسی کاحصہ ہے اور اس پر کسی بھی طرح کا سمجھوتہ خار ج ازمکان ہے ۔ ہفتہ وار پریس بریفنگ کے دوران انہوں نے کہا کہ پاکستان مسئلہ کشمیر پر ہرگز سمجھوتہ نہیں کریں گے اور یہ بات ذہن سے نکال دینی چاہیے کہ کرتار پورکی وجہ سے کشمیر کا معاملہ پیچھے چلا جائے گا۔ڈاکٹرمحمد فیصل نے کہا کہ چینی سرکاری ٹی وی پر کشمیرکو بھارت کا حصہ بنانے کی خبریں غلط ہیں، چین نے معاملے پر پاکستان کو تفصیلات سے آگاہ کیا، چین نے کشمیر کو سفید رنگ میں ظاہرکیا جب کہ چینی سرکاری ٹی وی نے تسلیم شدہ نقشہ استعمال کیا۔ترجمان دفترخارجہ پاکستان نے کہا کہ کرتار پور راہداری ابھی پوری طرح کھلا نہیں، پاکستان تو بھارت سے بات چیت چاہتا ہے، پاکستان سرکریک، کشمیر سمیت تمام تصفیہ طلب معاملات پر ’ڈائیلاگ‘ (مذکرات) چاہتا ہے۔ان کا کہناتھا کہ چین کو پاک بھارت بات چیت پرکوئی اعتراض نہیں اور بھارت سے مثبت ردعمل کی امید رکھتے ہیں۔ترجمان دفترخارجہ پاکستان نے کہا کہ کشمیرمیں بھارتی افواج کی زیادتیوں کا سلسلہ جاری ہے، سیکڑوں معصوم اورنہتے کشمیری پیلٹ گنز کے استعمال سے زخمی کئے گئے۔ترجمان دفتر خارجہ پاکستان نے کہا کہ جموں اورکشمیرکا معاملہ پس پشت نہیں ڈالنے دیں گے، کرتارپورراہداری کھلنے سے’ کشمیرکا ز‘ہرگزاثر اندازنہیں ہوگا، کرتارپورراہداری آئندہ سال نومبرسے قبل مکمل ہو جائے گی، مسئلہ کشمیرپرہرگزسمجھوتہ نہیں کریں گے جب کہ ذہن سے نکال دیں کہ کرتارپورکی وجہ سے جموں کشمیر کا معاملہ پیچھے چلا جائے گا۔ ممبئی کیس سے متعلق ترجمان دفترخارجہ کا کہنا تھا کہ کیس عدالت میں ہے تبصرہ نہیں کرسکتا، حملہ کیس میں قانون کے مطابق انصاف ہوگا، کیس کی سماعت انسداد دہشت گردی عدالت میں ہورہی ہے۔ترجمان دفترخارجہ نے کہا کہ امریکی نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد نے وزیراعظم اوروزیرخارجہ سے ملاقاتیں کیں، افغانستان میں مفاہمتی عمل پرتفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا، زلمے خلیل زاد کے دورے میں کوئی شرط نہیں رکھی گئی، بات چیت کچھ لینے اورکچھ دینے پر انحصار کرتی ہے، پاکستان افغانستان میں مفاہمتی عمل آگے بڑھانے پر یقین رکھتا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Social media & sharing icons powered by UltimatelySocial