ایس ایس اے اساتذہ کی احتجاجی ریلی پر پولیس کی یلغار 

مظاہرین پرلاٹھی چارج،رنگین پانی کی بوچھاڑ ،کئی مضروب اورگرفتار
سری نگر؍؍کے این این؍؍ کارروائی کے نتیجے میں افراتفری کے عالم میں کئی مظاہرین کو چوٹیں آئیں جبکہ ایجیک صدر عبدالقیوم وانی سمیت درجنوں مظاہرین کو حراست میں لیا گیا۔اس دوران مظاہرین نے دھمکی دی کہ اگر جائز مطالبات کو پورا نہیں کیا گیا ،تو احتجاجی مظاہروں میں شدت لائی جائیگی۔کے این این کے مطابق سروشکھشا ابھیان کے تحت کام کرنے والے اساتذہ نے جمعرات کو اپنے مطالبات کو لیکر سرینگر میں احتجاجی مظاہرے کئے۔مختلف اسکیموں کے تحت محکمہ تعلیم میں تعینات ٹیچروں کی ایک خاصی تعدادٹیچرس جوائنٹ ایکشن کمیٹی اورایمپلائز جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے بینروں تلے میونسپل پارک پولو ویو میں جمع ہوئی ،جہاں انہوں نے اپنے مطالبات کو لیکر احتجاجی دھرنا دیا۔ اساتذہ کی 60انجمنوں کے مشترکہ پلیٹ فارم ٹیچرس جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے نمائندوں نے اس احتجاج میں حصہ لیا جبکہ یہ احتجاج ایجیک کے بینر تلے دیا گیا۔احتجاجی مظاہرین7ویں پے کمیشن کے سفارشات ایس ایس اے اساتذہ پر لاگو کرنے کا مطالبہ کررہے تھے۔وہ ایس ایس اے ٹیچرس ،ہیڈ ٹیچرس اور رمسا کے تحت تعینات اساتذہ کو7ویں پے کمیشن کے زمر ے میں لانے کا مطالبہ کیا۔انہوں نے کہا کہ جب تک نہ اْنکے جائز مطالبات کو پورا نہیں کیا جائیگا ،احتجاجی جدوجہد جاری رہے گی۔اس موقع پر نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے ایجیک صدر عبدالقیوم وانی نے کہا کہ آج کا یہ احتجاج حکومت کی وعدہ خلافی کے خلاف کیا جارہا ہے۔انہوں نے کہا کہ آج کے احتجاج میں اساتذہ انجمنوں کے نمائندوں نے ہی شرکت کی کیونکہ وہ نہیں چاہتے ہیں بچوں کا مستقبل مخدوش ہو جبکہ اْنہیں بار بار سڑکوں پر آنے کیلئے مجبور کیا جارہا ہے۔انہوں نے تنخواہوں کو اسٹریم لائن اور ساتویں پے کمیشن کی سفارشات کو لاگو کرنے کا مطالبہ کیا۔ ان کا کہناتھا کہ یہ صرف40ہزار اساتذہ کا معاملہ نہیں بلکہ یہ ریاست کے پانچ لاکھ ملازمین کا معاملہ ہے ،جسے صرف نظر کیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر مطالبات کو پورا نہیں کیا گیا ،تو احتجاجی مظاہروں میں شدت لائی جائیگی۔اس کے بعد احتجاجی مظاہرین نے ایک ریلی نکالی اور طے شدہ پروگرام کے تحت سیول سیکریٹریٹ کی جانب پیش قدمی کی۔تاہم پولیس نے اْن کا راستہ روکا اور آگے جانے کی اجازت نہیں دی۔اس موقعہ پر مظاہرین اور پولیس کے درمیان ٹکراؤکی صورتحال پیدا ہوئی ،جس دوران پولیس نے مظاہرین کو تتربتر کرنے کیلئے لاٹھیوں اور رنگین پانی کی بوچھاڑکی ،جسکی وجہ سے ریلی میں کھلبلی مچ گئی۔پولیس کی کارروائی کے نتیجے میں متعدد مظاہرین کو چوٹیں آئیں جن میں ٹریڈ یونین لیڈر لطیف ملک شامل ہے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *