بلدیاتی ،پنچایتی انتخابات کے انعقاد پر کوئی ابہام نہیں 

طے شدہ شیڈول کے مطابق ہونگے 
میڈیا رپورٹ یکسر مسترد ،چناؤ کی تاریخوں اور شیڈول میں کوئی تبدیلی نہیں :چیف سیکریٹری 
سرینگر؍؍کے این این ؍؍گور نر انتظامیہ نے بدھ کے روز ایک مرتبہ پھر یہ اعلان کیا کہ جموں وکشمیر میں طے شدہ شیڈول کے مطابق ہی بلدیاتی اور پنچایتی انتخابات منعقد ہونگے ۔ریاستی چیف سیکریٹری بی وی آرسبھرامنیم نے ان انتخابات کے ملتوی کئے جانے کی میڈیا رپورٹس کو یکسر مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ں وکشمیر میں بلدیاتی اور پنچایتی انتخابات کے شیڈول میں کوئی تبدیلی نہیں لائی گئی جبکہ یہ انتخابات مقررہ تاریخوں پر منعقد ہونگے۔کے این این کے مطابق ایس کے آئی سی سی میں منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ریاستی چیف سیکریٹری بی وی آرسبھرامنیم نے اْن رپورٹس کو یکسر مسترد کیا کہ جموں وکشمیر میں آئندہ بلدیاتی اور پنچایتی انتخابات کو ملتوی کئے جائیں گے ۔انہوں واضح کیا کہ جموں وکشمیر میں بلدیاتی اور پنچایتی انتخابات کے شیڈول میں کوئی تبدیلی نہیں لائی گئی جبکہ یہ انتخابات مقررہ تاریخوں پر منعقد ہونگے ۔ ریاستی چیف سیکریٹری بی وی آرسبھرامنیم نے کہا’بلدیاتی اور پنچایتی انتخابات کی تاریخوں یا شیڈول میں کوئی تبدیلی نہیں کی جائیگی‘ ۔ان کا کہناتھا ’ ان انتخابات کے انعقاد کے حوالے سے مختلف قیاس آرائیاں کی جارہی ہیں ،ہم نے فیصلہ لیا ہے کہ یہ انتخابات شیڈول کے مطابق ہونگے ،انتخابات کی تاریخوں میں کوئی تبدیلی نہیں ہوگی ،شیڈول میں کوئی تبدیلی نہیں ہوگی،میونسپل الیکشن کیلئے اب صرف تین ہفتے رہ چکے ہیں ،نومبر کے پہلے ہفتے میں پنچایتی انتخابات ہونگے۔‘اس سے قبل این ڈی ٹی وی نے ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے اپنی رپورٹ میں کہا تھا کہ دو بڑی علاقائی پارٹیوں کی جانب سے انتخابات کا بائیکاٹ کئے جانے کے بعد گورنر انتظامیہ ان انتخابات کو ملتوی کرسکتی ہے ،جس کا فیصلہ ریاستی انتطامی کونسل میٹنگ میں لیا جائیگا ۔یاد رہے کہ ریاستی گورنر انتظامیہ نے گزشتہ دونوں دو اہم مین سٹریم پارٹیوں نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی کی جانب سے مجوزہ بلدیاتی وپنچایتی انتخابات کے بائیکاٹ کو نظر انداز کرتے ہوئے کہا ہے کہ چناؤ شیڈول کے مطابق کرانے کا اعلان کیا تھا۔جنوبی ضلع کولگام میں منعقدہ عوامی دربارکے حاشیے پرنامہ نگاروں سے بات چیت کرتے ہوئے چیف سیکریٹری کاکہناتھاکہ بلدیاتی وپنچایتی انتخابات بمطابق شیڈول ہونگے۔انہوں نے پْراعتماداندازمیں کہا تھاکہ ریاست میں پنچایتی انتخابات بھی شیڈول کے عین مطابق ہونگے اوربلدیاتی انتخابات بھی شیڈول کے مطابق کرائے جائیں گے۔بی وی آرسبھرامنیم نے بتایاکہ ریاست میں بلدیاتی اورپنچایتی انتخابات کرانے کافیصلہ جولائی کے مہینے میں لیاگیا،اوراس سلسلے میں تب سے ہی تیاریاں جاری ہیں۔انہوں نے کہاکہ ووٹرلسٹ مرتب کرکے انکوحتمی شکل دی گئی ہے ،اورباقی لوازمات بھی پورے کئے جارہے ہیں۔ چیف سیکریٹری نے اعلان کیا تھا کہ بلدیاتی اورپنچایتی انتخابات کے حوالے سے بہت جلدچیف الیکٹورل آفیسر نوٹیفیکیشن جاری کرینگے۔انہوں نے کہا تھا کہ پنچایتی انتخابات 5نومبرسے ہونگے اوراسبارے میں چیف الیکٹورل آفیسر جلدہی تاریخوں کااعلان کریں گے۔سبھرامنیم کانامہ نگاروں سے کہناتھاکہ ایک ہفتے کے اندراندرآپ لوگ سارے انتخابی عمل کے بارے میں نوٹیفکیشن دیکھیں گے۔ خیال رہے کہ گورنر کی صدارت میں 31 اگست کو ہوئی ریاستی کونسل کی میٹنگ میں ریاست میں بلدیاتی اور پنچایتی انتخابات کے انعقاد کو منظوری دی گئی۔ ریاستی کونسل نے فیصلہ لیا کہ میونسپل اداروں کے انتخابات چار مرحلوں میں کرائے جائیں گے اور پولنگ کی تاریخیں یکم اکتوبر سے 5اکتوبر2018 تک ہوں گی۔ اسی طرح پنچایتوں کے انتخابات 8مرحلوں میں کرائے جائیں گے اور ان کی تاریخیں 8نومبر 2018سے لے کر 4دسمبر 2018 تک ہوں گی۔ادھر بلدیاتی اور پنچایتی انتخابات کو روبہ عمل لانے کیلئے ریاستی سرکار نے دو کمیٹیاں تشکیل دی ہیں۔کمشنر سیکریٹری عمومی انتظامی محکمہ نے اس ضمن میں احکامات جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ مختلف محکموں کے درمیان بہتر تال میل بنائے رکھنے کیلئے چناؤ کیلئے دو کمیٹیاں تشکیل دی جارہی ہیں۔نوٹیفکیشن کے مطابق میونسپل چناؤ کیلئے محکمہ داخلہ، شہری ترقی ،خزانہ،جنرل ایڈمنسٹریشن،انفارمیشن اور پولیس سربراہان پر مشتمل 6رکنی پینل بنایا گیا ہے تاکہ چناؤ کیلئے بہتر تال میل ہوسکے۔اسی طرح پنچایتی انتخابات کیلئے بھی 6رکنی پینل بنایا گیا ہے جو محکمہ داخلہ،دہی ترقی،خزانہ،انفارمیشن، جی اے ڈی اور پولیس سربرہان پر مشتمل ہوگا۔یاد رہے کہ نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی نے کہا تھا کہ جب تک دفعہ35اے کے معاملے پر مرکزی حکومت اپنا موقف واضح نہیں کرتی ،تب تک وہ انتخابی عمل کا حصہ نہیں بنیں گی ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *