جنرل آف پولیس کی عبوری بنیادوں پرتعیناتی کے بعدشش وپنج!

کون ہوگامستقل ڈی جی پی؟
مشرا،نوین اگروال،وی کے سنگھ،ایس ایم سہائے،یاپھردلباغ سنگھ کی مستقلی 
ویدکو کو تبدیل کرنے کی میں جلدی اوردلباغ سنگھ کوعبوری چارج کیوں:عمرعبداللہ
سری نگر؍؍کے این این ؍؍جموں وکشمیرپولیس کے نئے ڈائریکٹرجنرل کی تعیناتی کولیکرتعطل پیداہواہے کیونکہ جمعرات کورات دیرگئے ایک حکمنامے کے تحت ڈاکٹرایس پی ویدکواچانک اس ذمہ داری سے فارغ کرکے ڈائریکٹرجنرل جیل خانہ جات دلباغ سنگھ کوپولیس چیف کااضافی چارج دیاگیا،اوراس طرح سے نئے ڈی جی پی کی تعیناتی کولیکرغیریقینی صورتحال پیداہوگئی ۔اس دوران سینئرآئی پی ایس آفیسرایس ایم سہائے کونیاڈی جی پی تعینات کرنے کی قیاس آرائیاں کی جارہی ہیں تاہم اُن کامقابلہ سینئرترین آئی پی ایس آفیسرایس ایم مشرا،نوین اگروال،وی کے سنگھ اوردلباغ سنگھ سے بھی ہے ۔خیال رہے ایس کے مشرا1985بیچ کے آئی پی ایس آفیسراورنوین اگروال 1986کے آئی پی ایس آفیسرہیں جبکہ ایس ایم سہائے کے علاوہ وی کے سنگھ اوردلباغ سنگھ بھی 1987کے آئی پی ایس آفیسرزہیں ،اورخاتون آئی پی ایس آفیسرڈی آرڈولے برمن بھی1986بیچ کی آئی پی ایس آفیسرہیں ۔کشمیر نیوزنیٹ ورک کے مطابق حالیہ میڈیارپورٹ کہ مرکزی وزارت داخلہ جموں وکشمیرپولیس کی کارکردگی سے مطمئن نہیں ہے ،اسلئے پولیس چیف کوتبدیل کیاجائیگا،کے عین مطابق جمعرات کوشام یارات دیرگئے ریاستی محکمہ داخلہ کی جانب سے ایک حکمنامہ جاری کیاگیا،جسکی رؤسے ڈاکٹرشیش پال ویدکوپولیس چیف کی ذمہ داری سے فارغ کرتے ہوئے ریاستی پولیس سربراہ کااضافی چارج ڈائریکٹرجنرل جیل خانہ جات دلباغ سنگھ کودیاگیا۔ڈاکٹر وید کو ٹرانسپورٹ کمشنر (جموں وکشمیر) تعینات کیا گیا ۔ ریاستی محکمہ داخلہ کی طرف سے گذشتہ رات دیر گئے جاری کئے گئے حکم نامہ کے مطابق1986 بیچ کے آئی پی ایس افسر ڈاکٹر ایس پی وید کو تبدیل کرکے ٹرانسپورٹ کمشنر (جموں وکشمیر) تعینات کیا گیا ہے جبکہ ڈی جی پی جیل خانہ جات دلباغ سنگھ ریاستی پولیس کے سربراہ کا اضافی چارج سنبھالیں گے تاہم اس سرکاری حکمنامہ میں یہ واضح کیاگیاکہ دلباغ سنگھ کی تعیناتی عبوری بنیادوں پرعمل میں لائی گئی ہے اوریہ کہ وہ مستقل انتظام کئے جانے تک ریاست کے عبوری پولیس سربراہ ہوں گے۔یادرہے 1986بیچ کے سینئرآئی پی ایس آفیسرڈاکٹرایس پی ویدکی بطورڈی جی پی کے تعیناتی31دسمبر2016کوعمل میں لائی گئی تھی ۔اس دوران سینئرآئی پی ایس آفیسرایس ایم سہائے کونیاڈی جی پی تعینات کرنے کی قیاس آرائیاں کی جارہی ہیں تاہم اُن کامقابلہ سینئرترین آئی پی ایس آفیسرایس ایم مشرا،نوین اگروال،وی کے سنگھ اوردلباغ سنگھ سے بھی ہے ۔خیال رہے ایس کے مشرا1985بیچ کے آئی پی ایس آفیسراورنوین اگروال 1986کے آئی پی ایس آفیسرہیں جبکہ ایس ایم سہائے کے علاوہ وی کے سنگھ اوردلباغ سنگھ بھی 1987کے آئی پی ایس آفیسرزہیں ،اورخاتون آئی پی ایس آفیسرڈی آرڈولے برمن بھی1986بیچ کی آئی پی ایس آفیسرہیں ۔غورطلب ہے کہ اگست 2017میں سابق مخلوط سرکارکی کابینہ نے5سینئرترین آئی پی ایس افسروں کوڈی جی پی کے بطورترقی دی گئی تھی ،اوران آفیسرزمیں ایس ایم سہائے،ڈی آرڈولے برمن اورنوین چودھری بھی شامل تھے ۔سینارٹی کے اعتبارسے 1985بیچ کے آئی پی ایس آفیسرایس کے مشراڈی جی پی بننے کاحق رکھتے ہیں لیکن چونکہ 1959میں جنمے مشراچونکہ مستقبل قریب یااگلے سال کے دوران سبکدوش یاریٹائرہونے والے ہیں ،اسلئے اُنکوبطورڈی جی پی تعینات کرنے کاکم ہی امکان ہے ۔یہاں یہ بات بھی قابل ذکرہے کہ ایس کے مشراکے بعدسینئرترین آئی پی ایس آفیسرزمیں ایس ایم سہائے ،ڈی آرڈولے برمن اورنوین اگروال شامل ہیں ،اوریہ تینوں فی الوقت ڈیپوٹیشن پرمرکزی سطح پراپنی خدمات انجام دے رہے ہیں ۔ادھر ڈاکٹرایس پی ویدکی تبدیلی اوراُنکی جگہ جموں وکشمیرپولیس کیلئے ڈائریکٹرجنرل کی عبوری یاعارضی بنیادوں پرتعیناتی کولیکر ایک نئی سیاسی بحث شروع ہوگئی ،کیونکہ سابق وزیر اعلیٰ اور نیشنل کانفرنس کے نائب صدر عمرعبداللہ نے ڈاکٹر وید کی تبدیلی اور دلباغ سنگھ کی پولیس سربراہ کے عہدے پہ عبوری تعیناتی کے اقدام پر سوال اٹھاتے ہوئے کہاہے کہ ڈی جی کو تبدیل کرنا انتظامیہ کااستحقا ق ہے لیکن نئے ڈی جی کی تعیناتی عبو ری بنیادو ں پرکیوں عمل میں لائی گئی ہے؟۔ سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے سماجی رابط گاہ ٹویٹرپراپنے ایک ٹویٹ میں لکھا ’ڈی جی کو تبدیل کرنا انتظامیہ کے حد اختیار میں ہے۔ لیکن نئے ڈی جی کی عبوری تعیناتی کیوں؟ نئے (عبوری) ڈی جی نہیں جانتے کہ وہ پولیس سربراہ بنے رہیں گے یااضافے چارج سے فارغ کئے جائیں گے‘۔ عمر عبداللہ نے کہاکہ یہ جموں وکشمیر پولیس کے لئے اچھا نہیں ہے۔انہوں نے ایک اور ٹویٹ میں لکھا کہ ایس پی وید کو تبدیل کرنے کی کوئی جلدی نہیں تھی، انہیں مستقل انتظام کئے جانے تک تبدیل نہیں کیا جانا چاہیے تھا۔اس دوران تبدیل کئے گئے پولیس سربراہ ڈاکٹر وید نے اپنے ایک ٹویٹ میں لکھا ’میں خدا کا شکر گذار ہوں جنہوں نے مجھے اپنے لوگوں اور ملک کی خدمت کرنے کا موقع دیا‘۔انہوں نے مزیدتحریرکیاکہ میں جموں وکشمیر پولیس، سیکورٹی ایجنسیوں اور اہلیان جموں وکشمیر کا بھی ان کے سپورٹ اور مجھ پر بھروسے کیلئے شکر گذار ہوں،اوریہ کہ میں نئے ڈی جی پی کے لئے نیک خواہشات کا اظہار کرتا ہوں‘۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *