شوپیان میں جھڑپ اختتام پذیر ، حزب اور جیش سے وابستہ دو مقامی جنگجو ، غیر ریاستی مزدور اور فوجی اہلکار ازجاں

سوپور میں فورسز اور جنگجوﺅں کے مابین مسلح تصادم آرائی میں دو جنگجو جاں بحق ، علاقے میں تلاشی آپریشن جاری
احتجاجی مظاہروں اور مکمل ہڑتال کے بیچ شوپیان میں جاں بحق دونوں جنگجو آبائی علاقوں میں سپرد خاک
سرینگرسی این آئیجنوبی ضلع شوپیان کے پاندوشن نامی گاﺅں میں فوج و فورسز اور جنگجوﺅں کے مابین جاری 24گھنٹوں تک جاری رہنے والی خونین معرکہ آرائی میں حزب اور جیش محمد سے وابستہ دو مقامی جنگجو اور ایک فوجی اہلکار ہلاک ہو گیا جبکہ جھڑپ کے مقام سے غیر ریاستی شہری کی نعش بھی بر آمد کی گئی ۔ اسی دوران شوپیان کے بعد سوپور کے مضافات میں فورسز اور جنگجوﺅں کے مابین جھڑ پ میں دو جنگجو جاں بحق ہو گئے ۔ ادھر جھڑپوں کے باعث ضلع شوپیان اور قصبہ سوپور میں موبائیل انٹر نیٹ خدمات معطل کی گئی ۔جبکہ جھڑپوں کے بیچ نوجوانوں کی ٹولیوں نے سڑکوں پر نکل کر احتجاجی مظاہرے کئے جس دوران فورسز اور نوجوانوں کے مابین جھڑپیں بھی ہوئی جس دوران فورسز نے مشتعل نوجوانوں کو منتشر کرنے کیلئے ٹیر گیس شلنگ کی ۔ سی این آئی کو نمائندے نے شوپیان سے اطلاع دی ہے کہ ضلع کے پاندوشن نامی گاﺅں میں جنگجوﺅں کی موجودگی کی اطلاع ملنے کے بعد جمعرات اور جمعہ کی درمیانی شب کو محاصرے میں لیا ۔ پولیس ذرائع نے بتایا کہ جونہی سیکورٹی فورسز مذکورہ گاو¿ں میں ایک مخصوص کی جانب پیش قدمی کررہے تھے تو وہاں ایک رہائشی مکان میں موجود جنگجوو¿ں کے ایک گروپ نے فورسز پر اپنی بندوقوں کے دھانے کھول دیے اور فائرنگ کی۔ ذرائع نے بتایا فورسز نے جوابی فائرنگ کی جس کے بعد طرفین کے مابین باضابطہ طور پر گولہ باری کا تبادلہ شروع ہوا۔ذرائع نے بتایا کہ ابتدائی فائرنگ کے ساتھ ہی فورسز نے علاقے کا محاصرہ تنگ کیا جس کے ساتھ ہی جنگجوﺅں کے فرار ہونے کے تمام راستے سیل کئے گئے ۔تاہم اندھیر چھا جانے کے باعث آپریشن کو جمعہ کی صبح تک ملتوی کر دیا ۔ معلوم ہوا ہے کہ جمعہ کی شام دیر گئے جھڑپ میں ایک مقامی جنگجو جس کی شناخت زیت الاسلام ساکنہ میندر شوپیان کے بطور ہوئی ہے ۔ اسی دوران معلوم ہوا ہے کہ سنیچروار کی صبح علاقے میں جھڑپ کے مقام سے تلاشی کارورائی کے دوران جھڑپ کے مقام سے ایک اور جنگجو اور غیر ریاستی مزور کی نعش بر آمد کی گئی اورا س طرح سے جھڑپ میں مرنے والوں کی تعداد 4پہنچ گئی ہے۔جن میں دو جنگجو ، ایک فوجی اہلکار اور ایک غیر مزدور شامل ہے ۔ ادھر معلوم ہوا ہے کہ علاقے میں جھڑپ ختم ہو نے کے ساتھ ہی علاقے میں نوجوانوں کی ٹولیوں نے سڑکوں پر نکل کر احتجاجی مظاہرے کئے جس دوران فورسز اور مظاہرین کے درمیان جھڑپیں ہوئی ۔ معلوم ہوا ہے کہ فورسز نے مشتعل مظاہرین کو منشر کرنے کیلئے ٹیر گیس شلنگ اور پیلٹ فائرنگ کا استعمال کیا۔ پولیس نے جھڑپ کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ علاقے میں جھڑپ کے مقام سے سنیچروار کی صبح ایک اور جنگجو کی نعش بر آمد کی گئی اور اس طرح سے جھڑپ دو جنگجوﺅں کی ہلاکت پر اختتام پذیر ہوئی جن کا تعلق عسکری تنظیم جیش محمد اور حزب سے تھا ۔ پولیس کے مطابق فائرنگ کے تبادلے میں ایک فوجی اہلکار ہلاک ہو گیا ۔جبکہ جھڑپ کے مقام سے ایک غیر ریاستی مزدو ر کی نعش بھی بر آمد ہوئی ۔ پولیس نے سنیچر کو کہا کہ جنوبی ضلع کے پاندوشن نامی گاﺅں میں جنگجوﺅں اور فورسز کے مابین جو معرکہ آرائی گذشتہ روز سے جاری تھی ا±س میں ایک اور جنگجو جاں بحق ہوگیا ہے۔پولیس کے مطابق دوسرے جاں بحق جنگجو کا تعلق حزب المجاہدین کے ساتھ تھا۔پولیس نے دوسرے جاں بحق جنگجو کی شناخت منظور احمد بٹ ساکنہ وچی کے طور کرتے ہوئے کہا کہ وہ کئی معاملات میں پولیس کو مطلوب تھا ۔ ادھر شمالی قصبہ سوپور کے وارہ پورہ، ملما پنپورہ میں فورسز اور جنگجوﺅں کے درمیان مسلح تصادم آرائی میںد و جنگجو جاں بحق ہو گئے ۔ پولیس ذرائع کے مطابق علاقے میں جنگجوﺅں کی موجودگی کی اطلاع ملنے کے بعد سنیچروار کی صبح فوج و فورسز ، سی آر پی ایف اور ایس او جی نے علاقے کو محاصرے میں لیا ۔ پولیس ذرائع نے بتایا کہ جونہی سیکورٹی فورسز مذکورہ گاو¿ں میں ایک مخصوص کی جانب پیش قدمی کررہے تھے تو وہاں ایک رہائشی مکان میں موجود جنگجوو¿ں کے ایک گروپ نے فورسز پر اپنی بندوقوں کے دھانے کھول دیے اور فائرنگ کی۔ ذرائع کے مطابق اس آپسی فائرنگ میں اب تک دو جنگجو جاں بحق ہو گئے جبکہ آخری اطلاعات ملنے تک فورسز کا آپریشن جاری تھا۔پولیس نے تاہم ابھی جاں بحق جنگجوﺅں کی شناخت نہیں کی ہے۔ اسی دوران معلوم ہوا ہے کہ شوپیان اور سوپور میں جنگجوﺅں ہلاکتوں کے خلاف نوجوانوں نے احتجاجی مظاہرے کئے جس دوران مظاہرین اور فورسز کے درمیان پُر تشدد جھڑپیں ہوئی ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Social Share Buttons and Icons powered by Ultimatelysocial