عرسِ شاہِ ہمدان کے سلسلے میں خانقاہِ معلی میں منعقدہ میٹنگ

ساگر نے میں سہولیات کا جائزہ لیا،شہر کی سڑکوں کی ناگفتہ بہہ حالت پر اظہارِ برہمی
سرینگرکے این ایس نیشنل کانفرنس کے جنرل سکریٹری علی محمد ساگرنے شہر خاص کے درجنوں علاقوں کا دورہ کرنے کے دوران تاریخی خانقاہِ معلی میں بھی حاضری دی اور عرس مبارک کے سلسلے میں زائرین کی سہولیات کیلئے اُٹھائے گئے اقدامات کا ایک میٹنگ میں جائزہ بھی لیا۔انہوں نے شہر خاص کی سڑکوں کی ناگفتہ بہہ حالت پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ سڑکوں کی خستہ حالی کے نتیجے میں ٹرانسپورٹر کئی علاقوں میں گاڑیاں لے جانے سے انکار کرتے ہیں جس کی وجہ سے لوگوں کو سخت تکلیف دہ صورتحال کا سامنا درپیش ہے۔ کشمیرنیوز سروس (کے این ایس) کے مطابق نیشنل کانفرنس کے جنرل سکریٹری علی محمد ساگرنے جمعہ کو شہر خاص کے درجنوں علاقوں کا دورہ کرنے کے دوران تاریخی خانقاہِ معلی میں بھی حاضری دی اور عرس مبارک کے سلسلے میں زائرین کی سہولیات کیلئے اُٹھائے گئے اقدامات کا ایک میٹنگ میں جائزہ بھی لیا۔ میٹنگ میں آر اینڈ بی، پی ڈی ڈی ، میونسپلٹی ، پی ایچ ای، سٹی روڑس، یو ای ای ڈی، ایری گیشن و فلڈ کنٹرول، وقف بورڈ اور دیگر محکموں کے اعلیٰ حکام کے علاوہ خدامانِ زیارت و منتظمین بھی موجود تھے۔میٹنگ میں عرس مبارک کی تیاریوں کو حتمی شکل دی گئی۔ ساگر نے انتظامیہ سے کہا ہے کہ وہ عرس مبارک حضرت امیر کبیر میر سید علی ہمدانیؒکے سلسلے میں زائرین کی سہولیات کےلئے تمام تر اقدامات خاص کر بغیر خلل بجلی ،پینے کا صاف پانی اور صحت و صفائی کے موثر اقدامات کئے جائیں اور ساتھ ہی ایل ای ڈی لائٹیں نصب کی جائیں تاکہ عقیدت مندووں کو کسی پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ اس کے علاوہ انہوں نے مختلف علاقوں کے دورے کے دوران لوگوں کے مسائل و مشکلات کی جانکاری حاصل کی۔ لوگوں نے انہیں مختلف نوعیت کے روز مرہ کے مسائل و مشکلات خصوصاً سڑکوں کی خستہ حالی کے بارے میں جانکاری دی۔ انہوں نے گورنر انتظامیہ پر زور دیا کہ موسم کے رہتے سڑکوں پر میکڈم بچھایا جائے تاکہ لوگوں کو راحت پہنچ سکے۔ انہوں نے کہا کہ سڑکوں کی ناگفتہ بہہ حالت کی وجہ سے ٹرانسپورٹر کئی علاقوں میں گاڑیاں لے جانے سے انکار کررہے ہیں جس سے لوگوں کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہاہے۔ ساگر نے کہا کہ یہاں ہر سال گرمیاں شروع ہونے کے ساتھ ہی تمام سڑکوں اور رابطہ سڑکوں پر میکڈم بچھایا جاتا تھا لیکن سابق پی ڈی پی بھاجپا حکومت اور اب گورنر راج میں اس جانب کوئی بھی توجہ مبذول کی جارہی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Social Share Buttons and Icons powered by Ultimatelysocial