پیٹرولیم مصنوعات کی آسمان چھوتی قیمتیں

کانگریس اور سی پی آئی (ایم) کا سرینگر میں احتجاج
مودی حکومت نے وہ کیا جو 70سال میں کبھی بھی نہیں ہوا:میر ؍تاریگامی
سری نگر؍؍کے این این ؍؍پیٹرولیم مصنوعات کی آسمان چھوتی قیمتوں، ڈالر کے مقابلہ روپیہ کی گرتی قدر اور مودی حکومت کی عوام مخالف پالیسیوں کے خلاف کانگریس کی اپیل پر جہاں بھارت بھر میں پیر کو احتجاجی مظاہرے کئے گئے ،وہیں سرینگر میں بھی کانگریس اور سی پی آئی (ایم) نے بھی الگ الگ احتجاجی ریلیاں نکالیں۔جس دوران غلام احمد میر اور محمد یوسف تاریگامی نے کہا ہے کہ پیٹرلیم مصنوعات کی آسمان چھوتی قیمتیں ڈالر کے مقابلہ روپیہ کی گرتی قدر اور مودی حکومت کی عوام مخالف پالیسیوں کے نتیجے میں مہنگائی عروج پر پہنچ گئی ہے اور عوام آدمی کا جینا دوبر ہوگیا ہے ۔کشمیر نیوز نیٹ ورک کے مطابق کانگریس کی ’’بھارت بند ‘‘ کال پر جہاں ملک بھر میں سیاسی پارٹیوں کی جانب سے احتجاجی ریلیاں نکالی گئیں جبکہ وادی کشمیر میں بھی کانگریس اور سی پی آئی (ایم ) نے بھی احتجاجی ریلیاں نکالی ۔کانگریس پارٹی سرینگر کے پارٹی ہیڈکواٹر واقع مولانا آزاد روڑ سے ایک احتجاجی ریلی نکالی ،جس کی قیادت پارٹی کے ریاستی صدر غلام احمد میر نے کی ۔ کانگریس کی طرف سے دی گئی ’بھارت بند‘ کی کال پر پیر کے روز جموں وکشمیر پردیش کانگریس کمیٹی کی جانب سے گرمائی دارالحکومت سری نگر میں احتجاجی مارچ نکالا گیا جس کے دوران نریندر مودی کی قیادت والی این ڈی اے سرکار کے خلاف شدید نعرے بازی کی گئی۔ تاہم وادی میں ’بھارت بند‘ کا کوئی اثر نظر نہیں آیا۔ وادی بھر میں کاروباری سرگرمیاں معمول کے مطابق جاری رہیں جبکہ گاڑیاں بھی معمول کے مطابق چلتی رہیں۔ پیر کو سینکڑوں کی تعداد میں کانگریس عہدیدار اور کارکن یہاں پارٹی دفتر میں جمع ہوئے اور مصروف ترین مولانا آزاد روڑ پر احتجاجی ریلی نکالی۔ریلی کے شرکاء نے اپنے ہاتھوں میں پارٹی کے جھنڈے، بینرس اور پلے کارڈس اٹھا رکھے تھے۔ وہ ’انڈین نیشنل کانگرنس زندہ باد، گرتا روپیہ مہنگا تیل مودی تیرے بھاشن فیل، مودی سرکار فیل فیل، مودی سرکار ہائے ہائے ، بی جے پی کا جو یار غدار ہے غدار ہے، امت شاہ کا جو یار ہے غدار ہے غدار ہے، مودی کا جو یار ہے غدار ہے غدار ہے‘ جیسے نعرے لگارہے تھے۔ اس احتجاجی ریلی میں پارٹی کے سینئر لیڈران وکارکنان کی ایک خاصی تعداد نے شرکت کی جس میں خواتین کارکنان اور عہدیداراں بھی شامل تھیں ۔احتجاجی ریلی کے موقعے پر غلام احمد میر نے کہا کہ وزیر اعظم ہند نریندر مودی نے ملک کے عوام کا بھروسہ توڑا ہے۔ انہوں نے کہا’مودی جی نے کہا تھا کہ 70 سال میں جو نہیں ہوا وہ کر کے دکھائیں گے، انہوں نے واقعی جو کچھ کیا ہے وہ 70 سال میں کبھی نہیں ہوا‘۔انہوں نے کہا، ’’نریندر مودی خاموش ہیں، انہوں نے پیٹرولیم مصنوعات ،بڑھتی مہنگائی، کسانوں کی حالت اور خواتین کے تئیں ظلم و ستم پر ایک لفظ نہیں کہا۔‘‘اس دوران قاضی گنڈ ، اننت ناگ اور کپوارہ می میں بھی کانگریس کی جانب سے مودی حکومت کے خلاف احتجاجی ریلیاں نکالی گئیں ۔ادھر سی پی آئی ایم کی جانب سے پریس کالونی سرینگر میں ایک احتجاجی مظاہرہ کا اہتمام کیا گیا ۔اس احتجاج کی قیادت محمد یوسف تاریگامی نے کی۔انہوں نے کہا کہ بڑھتی مہنگائی نے عام آدمی کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے ۔یاد رہے کہ پٹرول۔ڈیزل کی آسمان چھوتی قیمتوں، ڈالر کے مقابلہ روپیہ کی گرتی قدر اور مودی حکومت کی عوام مخالف پالیسیوں کے خلاف کانگریس کی اپیل پر حزب اختلاف کی پارٹیوں کی جانب سے ’بھارت بند‘ کا اہتمام کیا گیا ہے۔ بند کئی شہروں میں مشتعل ہو گیا ، کئی جگہ ٹرینوں کو بھی روکا گیا۔کانگریس اور تقریباً تمام حزب اختلاف کے بند کا اثر صبح سے ہی نظر آنے لگا، جگہ جگہ مظاہرہ کیا گیا اور مودی حکومت کے خلاف نعرے بازی کی گئی۔ ملک بھر میں کانگریس کے ’بھارت بند‘ کی حمایت میں20 پارٹیاں سڑکوں پر آئیں۔ کیلاش مانسروور یاترا سے لوٹے کانگریس صدر راہل گاندھی بھی احتجاج میں شامل ہوئے۔ انہوں نے سب سے پہلے راج گھاٹ پہنچ کر مہاتما گاندھی کو خراج عقیدت پیش کیا اس کے بعد رام لیلا میدان تک اپوزیشن کے مارچ کی قیادت کی۔ مارچ میں یو پی اے چیئرپرسن سونیا گاندھی اور سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ بھی شامل ہوئے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *