یاسین ملک کی بگڑتی صحت پر تشویش: حریت (ع

علیل رہنما کو فوری طور پر رہا کیا جائے
سرینگرکے این ایس حریت کانفرنس(ع) نے سرکردہ علیل مزاحمتی رہنما محمد یاسین ملک کی تہاڑ جیل دلی میں ان کی بگڑتی صحت پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے انکی بلامشروط رہائی پر زور دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ علیل رہنما کے اہل خانہ نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے گفتگو کے دوران ان کی صحت کے حوالے سے جو تشویشناک انکشافات کئے ہیں اس سلسلے میں موصوف کی سلامتی کے حوالے سے شدید خدشات نے جنم لیا ہے ۔کشمیرنیوز سروس (کے این ایس) کو موصولہ بیان کے مطابق حریت کانفرنس(ع) نے سرکردہ علیل مزاحمتی رہنما محمد یاسین ملک کی تہاڑ جیل دلی میں ان کی بگڑتی صحت پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے انکی بلامشروط رہائی پر زور دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ علیل رہنما کے اہل خانہ نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے گفتگو کے دوران ان کی صحت کے حوالے سے جو تشویشناک انکشافات کئے ہیں اس سلسلے میں موصوف کی سلامتی کے حوالے سے شدید خدشات نے جنم لیا ہے۔موصولہ بیان میں کہا گیا کہ یہ جیل حکام کی ذمہ داری ہے کہ وہ محبو س رہنما کو مناسب طبی سہولیات بہم رکھیں اور ان کے علاج و معالجے پر خصوصی توجہ دیں کیونکہ موصوف پہلے ہی کئی شدید عارضوں میں مبتلا ہیں اور جیل میں مناسب طبی امداد نہ ملنے کی وجہ سے ان کی صحت ہرگزرتے دن کے ساتھ گرتی جارہی ہے ۔بیان میںمزید کہا گیا کہ تہاڑ جیل گزشتہ کئی برسوں سے مقید سرکردہ مزاحمتی قائدین جن میںشبیر احمد شاہ،ایڈوکیٹ شاہد الاسلام، الطاف احمد شاہ، نعیم احمد خان، ایاز اکبر، پیر سیف اللہ، راجہ معراج الدین کلوال، فاروق احمد ڈار، ظہور احمدوٹالی، سید شاہد یوسف، سید شکیل احمد، آسیہ اندرابی، فہمیدہ صوفی، ناہیدہ نصرین وغیرہ کی مسلسل حراست پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا گیا کہ ان قائدین کو جرم بے گناہی کی پاداش میں جیل میں رکھا گیا ہے اور آج تک ان کے خلاف کوئی بھی جرم ثابت نہیں کیا جاسکا۔بیان میں بھارت کی مختلف ریاستوں کی جیلوں میں سالہا سال سے مقید سینکڑوں کشمیری نظر بندوں کی حالت زار کو حد درجہ تشویشناک قرار دیتے ہوئے کہا گیا کہ عدالتی احکامات کے باوجود انہیں دور دراز کی جیلوں میں مقید رکھنا اور ان قیدیوں تک ان کے عزیزوں کی رسائی کو مشکل بنانا حقوق انسانی کی سنگین خلاف ورزی ہے ۔بیان میں حقوق بشر کے عالمی اداروں سے اپیل کی گئی کہ وہ بذات خود ان جیلوں کا دورہ کرکے ان قیدیوں کی ناگفتہ بہہ حالت کا جائزہ لیں اور ان کی غیر مشروط رہائی کیلئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کریں ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Social Share Buttons and Icons powered by Ultimatelysocial